دعاؤں میں بہت طاقت ہے

دعاؤں میں بہت طاقت ہے. یہ مانگنے سے بھی پوری ہوتی ہیں. اور بغیر مانگے بھی. مگر سب سے زیادہ طاقت اُس دعا میں ہے جو کسی کو بغیر مانگے اپنا اثر دکھاتی ہے. یہ دعا دل سے نکلتی ہے اور دل خدا کا گھر ہے. یہ تو ہو ہی نہیں سکتا کہ خدا کے گھر سے دعا نکلے اور اُس میں اثر نہ ہو یا وہ زندگی ہی نہ بدل دے یا دنیا ہی نہ بدل دے.
اگر ہم عملی طور پر دیکھیں تو ہر سوچ یا ہر عمل کا ماحول پر اثر ہے. کبھی ایک دم سے, کبھی سالوں میں اور کبھی صدیوں میں. اگر ہم مسکرا دیں تو ماحول میں شگفتگی آجاتی ہے. بعض اوقات کسی کو ہنستا دیکھ کر وجہ نہ معلوم ہونے کے باوجود بھی بہت سے لوگ ہنسنا شروع کر دیتے ہیں. ایک بیج کسی جگہ دھوپ میں پھینک دینے کی وجہ سے سالوں بعد ہم اسی جگہ سائے میں بیٹھے ہوتے ہیں. ایسا لگتا ہے کہ سُرخ رنگ کی تتلی شروع سے سُرخ نہیں تھی بلکہ وہ صدیوں سے سُرخ رنگوں کے درمیان رہ رہ کر اُس کا رنگ سُرخ ہو گیا ہے. یا پتھروں میں رہنے والے کیڑوں مکوڑوں اور جانوروں کا رنگ پتھروں جیسا ہو گیا ہے. یہ سب کا سب ایک دوسرے پر اُن کی سوچ اور اُن کے عمل کی وجہ سے ہو رہا ہے.
ہماری دعا کسی کے لیے ہماری اچھی سوچ یا ہمارا اچھا عمل ہی ہے. جو یقینا” اپنا اثر دکھاتا ہے اور سب کچھ صحیح کر دینے کی صلاحیت رکھتا ہے.

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
W Iqbal Majidدعاؤں میں بہت طاقت ہے

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *