دل کے اپریشن کی وجوہات جاننے کے لیے چند سوالات

میرے ایک دوست کے دل کا اپریشن ہوا تو مجھے بہت تشویش ہوئی۔ جب وہ صحتیاب ہو کر آپنے گھر آ گئے تو میں نے اُن کے دل کے مرض کی وجوہات جاننے کے لیے اُن سے چند ایک سوالات کیے جن کا جواب اُن کی مسکراہٹ نے دیا۔ وہ سوالات مندرجہ ذیل ہیں۔

۱ آپ کو دل کا مرض کس عمر میں لاحق ہوا تھا
۲ دل کا معاملہ کتنی دیر تک چلتا رہا
۳ اگر دل کا معاملہ تھا تو آپ دوستوں سے چھپاتے کیوں رہے؟
۴ اب جو دل میں درد ہوا ہے کیا یہ اُسی نے دیا ہے جسے آپ نے اپنے دل میں بٹھایا ہوا تھا ہا کسی اور نے؟
۵ کیا آپ نے یہ دیکھنے کے لیے تو دل کا اپریشن نہیں کروایا کہ آپ نے جسے دل میں بٹھائا ہوا تھا وہ اب دل میں ہے بھی یا نہیں؟
۶ کیا وہ آپ کو دل کے کسی کونے میں ملا یا نہیں؟
۷ کیا آپ نے کسی کو دل سے نکالنے کے لیے تو اپریشن نہیں کروایا؟
۸ کیا اُسے پتا ہے جس کے لیے آپ نے دل کا اپریشن یہ کروا لیا؟
۹ جب اپریشن ہوا تو کیا سینے میں دل تھا بھی یا نہیں؟

جب وہ ہسپتال میں اپنے کمرے میں آئے تھے تو میں نے اُن کے بیٹے کو فون کر کے خیریت پوچھی اور کہا کہ بات کرنا شروع ہو گئے ہیں؟ وہ بولے میں نے آج ایک دو لوگوں سے بات کرائی ہے تو میں نے کہا کہ ایک سے اور کروانی ہے تو وہ بولے کس سے؟ تو میں نے کہا کہ تم کچھ دیر کے لیے فون اُن کے ہاتھ میں پکڑا کر کمرے سے باہر چلے جانا وہ خود ہی کر لیں گے اور اُن سے بات کر کے اُن کے زخم بھی جلدی بھر جائیں گے

سب دوستوں سے گزارش ہے کہ جس جس کے بھی دل کا معاملہ ہو وہ دوستوں سے نہ چھپائیں ، سب کو بتا دیں بلکہ اُس کی پُوری تفصیل فیس بُک پر لگا دیں۔ اپنی ذمہ داری پر، اگر امید کے بر عکس کچھ ہو آپ کی قسمت۔ مجھے الزام نہ دیجیے گا۔

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
W Iqbal Majidدل کے اپریشن کی وجوہات جاننے کے لیے چند سوالات

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *