معصوم مٹھائی

کسی اپنے کی بیٹی کی پیدائش کی مٹھائی ملنے پر

جو مٹھائی آپ نے بھیجی ہے بہت کمال کی ہے۔ مٹھائی تو میٹھی ہی ہوتی ہے مگر، اگر بیٹی کی پیدائش کی ہو تو اور بھی شیریں ہو جاتی ہے۔ معصوم مٹھائی کبھی نہیں سُنا تھا آج دیکھ لی۔ کئی قسم کے ذائقے اور کئی قسم کے رنگ۔ کچھ شوخ کچھ چنچل, کچھ ہلکے کچھ بھلے سے. کئی ڈلیاں روئی کے گالوں جیسی نرم اور کئی مکھن جیسی ملائم۔ کچھ ڈلیوں میں ٹھنڈک اور کچھ میں گرماہٹ۔ ڈلی کو پکڑنے لگیں تو دل کا سارا پیار ہاتھوں میں آ جائے۔

لگتا ہے کہ بنانے والا اِسے بنانے کی لگن میں اتنا مگن تھا کہ اُس نے، جو کچھ بھی اُس کے پاس تھا سب اِس میں ڈال دیا۔ پھر اِسے محبت کی آنچ دی اور اِس میں پیار کی چاشنی رچا دی۔ آج یہ مٹھائی زیادہ ہی حسین لگ رہی تھی۔

ایک ڈلی کو دیکھ کر میں ٹھٹھک کر رہ گیا اُس کی بناوٹ میں ‘مبارک باد’ جیسا کچھ لکھا ہوا نظر آیا پھر میں اُس میں سے مزید جو ڈھونڈنا شروع ہوا تو اُس پر بنی ہوئی لکیروں کے, رنگوں کے امتزاج، اُن کی ترتیب اور اُن کی امیزش کے اور پھر چکھنے پر اُس کی مٹھاس کے طرح طرح کے ذائقوں سے نصیب کے ایسے ایسے اشارے ملے جو سمجھیں تو ایسی خوش قسمتی کا پتا دیں کہ انسان کے مقدر پر رشک آئے اور لکھیں تو پوری کتاب بن جائے۔ بس آنکھیں دیکھتی گئیں اور دل خوش ہوتا گیا۔ ایسی قسمت والا کون ہو گا، شاید ساری دنیا میں ایک ہی۔

آخر میں جب مٹھائیوں کی ڈلیوں کی ترتیب کو بدلا تو ‘شکریہ’ بن گیا یہ مٹھائی تو ایسی تھی جو دل میں ہی بس گئی تھی۔

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
W Iqbal Majidمعصوم مٹھائی

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *